حضرت حسن شا ہ رحمۃ اﷲ علیہ

  آپ تینو ں بھا ئیو ں میں سب سے چھو ٹے اور بہت لا ڈلے تھے۔ابھی بہت کم سن تھے کہ آپ کے  وا لد گرامی حضرت غلا م شاہ  صا حب رحمۃ اﷲ علیہ کا وصال ہو گیا۔کبھی اپنے بڑے بھا ئی حضرت سلطا ن محمو دشاہ رحمۃﷲعلیہ کے سا تھ سفر کر تے اور کبھی حضرت محمد سعید شاہ صا حب رحمۃ اﷲ علیہ کے سا تھ ہو تے ۔ قبلہ  حضرت محمد سعید شاہ صا حب رحمۃ اﷲ علیہ نے آپ کی تعلیم و تربیت خو د کی۔ بڑے  امیر طبع اورنازک مز ا ج تھے۔اہل بیت سے سخت محبت تھی۔لہٰذا آپ کو حسینی پیر کے لقب سے  پکا را جا تا تھا۔آپ کے صاحبزادے سجا د حسین شاہ تپ دق کے مر ض میں مبتلا ہو گئے۔ ملک کے نا مو ر ڈاکٹروں کے علا ج کے با و جو د جا نبر نہ ہو سکے ۔تو آپ مایو س ہو گئے۔مختصر سی  علا لت کے بعد ۶ ،اپریل ۵۷۹۱ء کو آپ کا انتقا ل  ہو گیا ۔ان کے صا حبزا دہ سجا دحسین شاہ بھی۳۱  فر وری۶۷۹۱ء کو فو ت ہو گئے۔
     ؎ میں بھی فا نی ، تو بھی فا نی سب ہےں فانی دہر میں
    اک قیا مت  ہے مگر  مر گِ  جو انی  دہر  می